شہباز شریف منی لانڈرنگ کے مرتکب پائے گئے: شہزاد اکبر

لاہور: (سی این پی) شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ شہباز شریف منی لانڈرنگ کے مرتکب پائے گئے، دوسروں کے اکاؤنٹ استعمال کر کے وارداتیں کی گئیں، برطانوی قانون کے مطابق کسی مجرم کو وزٹ ویزہ نہیں مل سکتا، نواز شریف برطانیہ علاج کی غرض سے گئے تھے جو کہ انہوں نے نہیں کرایا۔ مشیر برائے احتساب شہزاد اکبر نے لاہور میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ منی لانڈرنگ کے دورانیے میں شہباز شریف پنجاب کے وزیراعلیٰ تھے، رمضان شوگر ملز نے ملازمین کے اکاؤنٹس کھلوائے، کیس کا چالان مکمل کرنے میں ایک سال کا عرصہ لگا، بینکنگ ٹرانزیکشنز کا شوگر کے کاروبار سے کوئی تعلق نہیں، اسحاق ڈار نے بے نامی اکاؤنٹس کھلوائے۔
شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ گلزار احمد خان کی تنخواہ 12 ہزار روپے تھی، 1.2 ارب روپے گلزار احمد کے اکاؤنٹ میں آئے، گلزار احمد خان کا اکاؤنٹ اس کی وفات کے بعد بھی چلتا رہا، ان لوگوں نے اقرار کیا ہے کہ ان کے اکاؤنٹ کھولے گئے، اقرار کیا اکاؤنٹ کھولنے کے بعد ان سے چیک لے لیے گئے، شریف فیملی نے ایف آئی اے تحقیقات کے دوران تعاون نہیں کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں