شیخ رشید کی درخواست ضمانت بعد از گرفتاری مسترد

 سابق صدر آصف زرداری پر قتل کی سازش کے الزام سے متعلق کیس میں سربراہ پاکستان عوامی مسلم لیگ شیخ رشید کی درخواست ضمانت بعد از گرفتاری مسترد کر دی گئی۔جوڈیشل مجسٹریٹ عمرشبیر نے محفوظ فیصلہ سنا دیا، عدالت نے اپنے فیصلے میں شیخ رشید کی درخواست ضمانت مسترد کردی۔

ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز کورٹ اسلام آباد میں جوڈیشل مجسٹریٹ عمر شبیر نے سابق وفاقی وزیر شیخ رشید کی درخواست ضمانت بعد از گرفتاری پر سماعت کی، عدالت نے محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے درخواست مسترد کر دی۔

جج نے شیخ رشید کے وکیل سے استفسار کیا آپ کے مطابق شیخ رشید عمران خان کے قتل کی سازش کاحصہ نہیں؟ اس پر وکیل کا کہنا تھا کہ شیخ رشید نے عمران خان کے بیان کا حوالہ دیا اور کہا وہ جو کہہ رہے ہیں ٹھیک کہہ رہے ہیں، شیخ رشید کا بیان نشر ہونے سے 2 روز قبل ہی مقدمہ درج ہوگیا تھا۔

شیخ رشید کے وکیل کا کہنا تھا کہ پولیس کے سامنے بھی قتل ہو جائے تو مقدمہ اتنی جلدی درج نہیں ہوتا، پولیس نے خود انکوائری کی اور مقدمہ بھی درج کر دیا، پولیس کو چاہیے تھا کہ شیخ رشید کا موقف لیتی اور اس پر قتل کی سازش کے حوالے سے تفتیش کرتی لیکن الٹی گنگا بہہ گئی، عمران خان کا بیان حقیقت پر مبنی ہے، عمران خان کے خلاف قتل کی سازش ہو رہی جس پر مقدمہ نہیں بنایا جارہا، البتہ آصف زرداری کی بدنامی پر مقدمہ درج کردیا گیا۔

وکیل کا کہنا تھا کہ شیخ رشید سے جسمانی ریمانڈ کے دوران پولیس کو کچھ برآمد نہیں ہوا، مقدمہ صرف سیاسی انتقام لینے کے لیے درج کیا گیا ہے، شیخ رشید کے گھر پر رات کو دھاوا بولا گیا، ساڑھے7 لاکھ سے زیادہ کیش پولیس لے گئی، متعدد قیمتی تحفے بھی پولیس لے گئی، پولیس شیخ رشید کی دو بلٹ پروف گاڑیاں بھی ساتھ لے گئی۔

وکیل سردار عبدالرازق کا کہنا تھا کہ شیخ رشید سے اب کوئی تفتیش کی ضرورت نہیں اس لیے ان کی ضمانت منظور کی جائے، ہائی کورٹ نے بھی فیصلے میں مزید کسی کارروائی سے روک دیا ہے۔

جج کا کہنا تھا کہ شیخ رشید نے ہسپتال میں وزیر داخلہ کے خلاف بیان دیا، کیا شیخ رشید کے الزامات سے ملک میں انتشار پھیلنے کا خدشہ نہیں؟۔

وکیل کا کہنا تھا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ اس سے متعلقہ درخواست کو معطل کر چکی ہے، شیخ رشید نے دوران حراست بیان دیا اور دوران حراست بیان کی کوئی اہمیت نہیں۔

پراسیکیوٹر نے اپنے دلائل میں کہا کہ شیخ رشید دوران حراست اپنے جملوں سے بار بار مقدمے میں لگی دفعات کے مرتکب ہوتے رہے، شیخ رشید کی جانب سے عمران خان کو قتل کرانےکا آصف زرداری کا بیان چھوٹا نہیں، آصف زرداری اور عمران خان کے بہت زیادہ فالوورز ہیں، شیخ رشید دو بڑے سیاسی گروپوں کے درمیان تصادم کروانا چاہتے ہیں۔

پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ شیخ رشید کے بیان سے سوسائٹی میں اشتعال پھیلنے کا خدشہ ہے، ہائی کورٹ نے صرف سمن کو معطل کیا تھا، شیخ رشید بہت مشکل سے گرفتار ہوئے، ضمانت ملی تو بھاگ جائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں