پارلیمنٹ حملہ کیس ، صدرپاکستان ڈاکٹر عارف علوی اوروفاقی وزراء سمیت 82 افراد کی بریت درخواستیں منظور

اسلام آباد(سی این پی)انسداد دہشتگردی عدالت کے جج محمد علی وڑائچ کی عدالت نے پارلیمنٹ حملہ کیس میں صدرپاکستان ڈاکٹر عارف علوی اوروفاقی وزراء سمیت 82 افراد کی بریت درخواستیں منظور کرلیں۔گذشتہ روز محمد علی بخاری ایڈووکیٹ کے ذریعے دائربریت درخواستوں پر سماعت کے دوران وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر تعلیم شفقت محمود اور پی ٹی آئی رہنما سیف اللہ نیازی عدالت پیش ہوئے، عدالت نے ملزمان کو حاضری لگا کر جانے کی اجازت دے دی اور کہاکہ دیگر ملزمان بھی آ جائیں تو اس کے بعد فیصلہ سناتے ہیں اور عدالت نے کیس کی سماعت میں وقفہ کردیا،اسی دوران وفاقی وزیر اسدعمر، وفاقی وزیر دفاع پرویزخٹک بھی عدالت آئے اورحاضری لگوانے کے بعد واپس چلے گئے، بعد ازاں دوبارہ سماعت شروع ہونے پر عدالت نے ڈاکٹر عارف علوی، شاہ محمود قریشی، اسدعمر، پرویزخٹک، شوکت یوسفزئی، عبدالعلیم خان، جہانگیر ترین، اعجاز چوہدری، شفقت محمود، سیف اللہ نیازی،راجہ خرم نواز، امجد رشید، مناظر علی، محمد رضوان، سیدتہذیب الحسن شاہ، گلزارحسین، محمد آذاد، طالب حسین اسدی، محمد عثمان، ریاض حسین، نذر حسین، محمد اختر، اخترعباس، محمد ابراہیم، خرم شہزاد، برکت احمد، ساجد محمود، محمد آصف، محمد امیتاز، نوید احمد، اکبر علی، محمد ذیشان، لقمان اکرم، عبدالمجید، طارق محمود، محمد یسین، محمد علی، عبدالسلام، غلام مرتضی، ذوالقرنین، باسط ابراہیم، نصیر احمد، ابراہیم قوی، محمد ہارون، مضب حسین، محمد رمضان، شاہد عمران، محمد عبداللہ، محمد فاروق، سہیل محمود، محمد عثمان، عبدالقیوم، محمد امین، عمر دراز، ناصرعباس، غلام حسین، محمد عبداللہ، محمد اشرف، محمد طاہر، محمد ارشاد، مرزاعدیل بیگ، سید ساحل حسین، عقیل حفیظ، عدیل حفیظ، عاطف ظہور، مہربان علی، باسط ابراہیم، اسدعزیزعباسی، علی شہباز، محمد اسد، محمد رضوان، محمد شاہد عمران، منیر احمد، عبدالماجد، عبدالاحد، محمد اعجاز، محمد احسن، محمد نعیم، عرفان حسین، آصف ستی، شاہویز خان اور حبیب الرحمن سمیت82 افراد شامل ہیں،یاد رہے کہ وزیر اعظم عمران خان پہلے ہی مقدمہ سے بری ہوچکے ہی اور پراسیکیوشن نے ملزمان کی بریت درخواستوں پر کوئی مخالفت نہیں کی، جبکہ پارلیمنٹ حملہ کیس کا مقدمہ 30 اگست2014ء کو تھانہ سیکرٹریٹ میں درج کیاگیاتھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں