انٹرنیشنل جوڈو فیڈریشن کا پیوٹن سے اعزاز بلیک بیلٹ واپس لینے کا فیصلہ

روس کے صدر ولادیمیر پیوٹن سے یوکرین پر حملے کے اعلان کے بعد ورلڈ تائیکوانڈو فیڈریشن نے اعزازی بلیک بیلٹ واپس لینے کا فیصلہ کرلیا۔

تائیکوانڈو کے کھیل کو کنٹرول کرنے والی بین الاقوامی فیڈریشن ورلڈ تائیکوانڈو نے ایک سرکاری بیان میں اعلان کیا کہ وہ یوکرین میں معصوم جانوں پر وحشیانہ حملوں کی شدید مذمت کرتے ہیں اور روس یوکرین جنگ کے فوری خاتمے کی امید کرتے ہیں۔

ورلڈ تائیکوانڈو فیڈریشن کا کہنا ہے کہ تائیکوانڈو نظریات کے تحت امن کو ہمیشہ فوقیت دی جاتی ہے۔

فیڈریشن نے روس اور بیلاروس میں تائیکوانڈو ایونٹس منعقد نہ کرنے کا بھی فیصلہ کیا، فیڈریشن نے اپنے بیان میں مزید یہ بھی کہا کہ عالمی تائیکوانڈو ایونٹس میں روسی اور بیلاروسی جھنڈے اور ترانے نہ دکھائے جائیں گے نہ چلائے جائیں گے۔

یاد رہے کہ روسی صدر کو 2013 میں جنوبی کوریا کے دورے کے دوران بلیک بیلٹ دی گئی تھی، یہ ​​اعزازی بلیک بیلٹ سابق امریکی صدور کو بھی دی جا چکی ہیں۔

واضح رہے کہ روس نے 24 فروری کو یوکرین پر بیلاروس کے راستے سے حملے کیے تھے، حملوں کے نتیجوں میں یوکرین کی افواج روسی فوجیوں کے خلاف اپنے ملک کا دفاع کر رہی ہیں۔

مغربی ممالک نے روس کے یوکرین پر حملے کے جواب میں اس پر اقتصادی پابندیاں عائد کرنے کا اعلان کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں