اب عمران خان کو گھبرانے کی ضرورت ہے،شاہد خاقان عباسی

اسلام آباد(سی این پی)سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہاکہ تیسرا سال عدالتوں میں چل رہا ہے نا پراسیکیوٹر کو پتہ ہے کہ کیس کیا ہے،چیئرمین نیب بتا دیں کہ آپ نے اس ملک میں کتنے سیاست دانوں کو پکڑا ہے اور اس کی وضاحت کریں،ان عدالتوں میں کیمرے لگائیں اور عوام کو دکھائیں،کیونکہ نا چئیرمین بیب تھکتا ہے نا وزراء نا عمران خان تھکتا ہے،اس حکومت کے کرپشن کے کیسز کی انتہا نہیں اور ایک دن ضرور اس کا حساب دینا پڑے گا،اس ملک کے غیر قانونی اور غیر آئینی وزیر احتساب کو کو اپنے اثاثوں کا جواب دینا ہو گا،صدر ایک آئینی عہدہ ہے اور وہ کوئی بھی آرڈیننس آتا ہے اور دستخط کر دیے جاتے ہیں، آرڈیننس کے تحت عوام کی آواز دبائی جا رہے ہیں، محسن بیگ کا معاملہ سب کے سامنے ہیں،ووٹ آپ کانفڈنس پر مشاورت ہو رہی ہے اب عمران خان کو گھبرانے کی ضرورت ہے،شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ صدر کا عہدہ ملک کا اہم عہدہ ہوتا ہے،بدقسمتی سے صدر بھی حکومت کے ڈیلی ویج ملازم بن گئے،چاروں صوبوں کے آئی جیز اور ڈی جی ایف آئی اے سے درخواست ہے کہ حکومت کے غیر قانونی کام میں شریک نہ ہو،یہ تو کل کو بھاگ جائیں گے مگر پریشانی آپ کو ہوگی،آپ حکومت کے ملازم ہیں، انہوں نے کہاکہ چیئرمین نیب نے جتنے سیاستدانوں کو پکڑا ہے ان کیسز کی تفصیلات سامنے لائے، چیئرمین نیب ، وزیراعظم اور حکومتی وزرا الزامات لگانے سے نہیں تھکتے،عمران خان نے ملکی معیشت کو تباہ کرکے رکھ دیا،عمران خان صرف یہی کہتے ہیں کہ کسی کو چھوڑوں گا نہیں، موجودہ حکومت کے کرپشن کے کیسز چیئرمین نیب کو نظر نہیں آتے،چیئرمین نیب اپنے اثاثوں کی تفصیلات سامنے لائیں،صدر مملکت کا کام اب صرف آرڈیننس جاری کرنا ہے،پیکا ایکٹ کے ذریعے عوام کی آواز دبانا ہے، محسن بیگ کے کیس میں نمونہ سب کے سامنے ہے، حکومت کے دن تھوڑے رہ گئے ہیں،پولیس اور ادارے عمران خان کی انتقامی کارووائی کا حصہ نہ بنے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں