سیاسی جماعتوں کی زمہ داری نہیں فرض ہے،عمران خان کے عذاب سے قوم کو نجات دلائی جائے،مریم نواز

اسلام آباد(سی این پی )پاکستان مسلم لیگ(ن)کی رہنماء مریم نواز نے میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہاکہایک آئینی طریقہ ہے پہلے اسکی جماعت پر دو آراء تھیں،ہمارا حلقہ پاکستان کے عوام ہیں، سیاسی جماعتوں کی زمہ داری نہیں فرض ہے،عمران خان کے عذاب سے قوم کو نجات دلائی جائے،اپوزیشن نے عوام کی پکار پر لبیک نہ کہا تو سیاسی جماعتیں بھی اتنی ہی زمہ دار ہوں گی، سمجھتی ہوں میاں صاحب عدم اعتماد کے قائل نہیں تھے،سی ای سی میٹنگ نے میاں صاحب کو مکمل اختیار دے دیا،لیکن پہلے وہ اس ایشو پر راضی نہیں تھے،عوام کی تکلیفوں مہنگائی اور عذاب کو فرض سمجھ کر ادا کرنی ہو گی، اللہ تعالی کا شکر ادا کرتی ہوں سچ کو ایک دن سامنے آنا ہوتا ہے،جج صاحبان نے جسطرح سوال کیے نیب کے پاس کوئی جواب نہیں تھا، رپورٹرز سے کہوں گئی کسطرح آج عمران خان اور نیب کا عدالت نے دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی کردیا گیا،عوامی عدم اعتماد کے بعد وزراء اور ممبران اسمبلی بھی تیار بیٹھے ہیں عدم اعتماد کے لیے،عمران خان کی پارٹی میں تمام لوگ اقتدار کے ساتھی تھے،عمران خان کی پارٹی آج کی بعد آپکو کہیں نظر نئیں آئے گئی، عمران خان اور انکی پارٹی جب عوام میں جائیں تو مشورہ ہے ہیلمٹ ضرور پہنیں، مریم نوازنے کہاکہ تاریخ کے سب سے بڑے کرپٹ اور چور عمران خان کے ساتھی ہیں،کیا یہ انکی حکومت ہے ایک ایک کروڑ دے کر ایس ایچ اوز لگ رہے ہیں،عمران خان اپنی تقریروں میں چور ڈاکو کے نعرے چھوڑیں،یہ بتائیں عدالتوں سے ہمارے حق میں گواہیاں آرہی ہیں،پندرہ فیصد تنخواہیں بڑھنے سے کوئی فرق نہیں پڑے گا، عمران خان کی اپنی تقریریں اپنی ڈوبتی گشتی کی نشانی ہیں،عمران خان کو پتہ ہے انکے ممبران چھلانگ لگانے کے لیے تیار بیٹھے ہیں، نواز شریف ملک سے باہر ہونے کے باوجود انکی جماعت متحد کھڑی ہے، عمران خان کے ممران اسمبلی میڈیا اور اسمبلی میں انکشافات سننے والے ہیں،ایک آئینی طریقہ ہے پہلے اسکی جماعت پر دو اراء تھیں،سیاسی جماعتوں کی زمہ داری نہیں فرض ہے، عمران خان کے عذاب سے قوم کو نجات دلائی جائے، اپوزیشن نے عوام کی پکار پر لبیک نہ کہا تو سیاسی جماعتیں بھی اتنی ہی زمہ دار ہوں گی،سمجھتی ہوں میاں صاحب عدم اعتماد کے قائل نہیں تھے،سی ای سی میٹنگ نے میاں صاحب کو مکمل اختیار دے دیا،لیکن پہلے وہ اس ایشو پر راضی نہیں تھے،عوام کی تکلیفوں مہنگائی اور عذاب کو فرض سمجھ کر ادا کرنی ہو گی، عمران خان اور انکی حکومت کسی کے لیے قابل برداشت نہیں،جن اداروں کی برف اپ اشارہ کررہے ہیں انکا سب سے بڑا حلقہ بھی عوام ہیں،فوجی اہلکاروں کے گھروں کو بھی مہنگائی نے بری طرح متاثر کیا،وہ سیکورٹی پر توجہ دیں یا گھر کے کچن پر توجہ دیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں